1,018

حالات میں بہتری کی دعا

مضمون نگار: حافظ مقبول نظامانی

عنوان سے قارئین سمجھ رہے ہوں گے کہ میں کوئی دعا بتا رہا ہوں جس کو پڑھنے کے بعد (میں نے پڑھنے کے الفاظ اس لیے لکھے ہیں کیونکہ ہم دعا مانگتے کم پڑھتے زیادہ ہیں) حالات بہتر ہو جائیں، مہنگائی اور بد امنی ختم ہو جائے گی، سودی نظام معیشت کی جگہ اسلامی نظام معیشت آجائے گا، ظلم کی جگہ عدالت و انصاف قائم ہو جائے گا، لوگ سماجی طور پر بہتر سے بہترین اخلاق والے ہو جائیں گے تو قارئین ایسا کچھ نہیں میں آپ کو ایک بتانے جا رہا ہوں جو سید منور حسن رحمۃ اللہ علیہ اپنی تقریر میں بیان فرمایا کرتے تھے۔

واقعہ

ایک مسجد کے مولوی صاحب کو مقتدیوں نے کہا کہ دعا فرمائیں حالات بہتر ہو جائیں تو مولوی صاحب نے بڑے ہی اچھے انداز میں بتایا کہ ہمارے محلے کی گٹر نالیاں خراب ہو گئی ہیں دعا کیجئے کہ وہ ٹھیک ہو جائیں تو کیا ایسا ممکن ہے کہ ہم عملی طور پر کچھ نہ کریں اور صرف دعا سے ہی گٹر نالی ٹھیک ہو جائے جب ایسا کچھ نہیں بلکہ ہم سب کو عملی طور پر اپنے حصے کا کام کرنا پڑے گا تب جاکر گٹر نالی ٹھیک ہو گی تو جناب حالات کی بہتری کیلئے بھی صرف دعا کافی نہیں بلکہ ہمیں عملی طور پر کردار ادا کرنا ہو گا اور اپنی زمہ داریاں پوری کرنی ہوں گی بلکل اسی طرح جس طرح ہم میں سے کوئی بیمار ہو جائے تو دعا کے ساتھ ساتھ ہم علاج بھی کرتے ہیں تو اسی طرح حالات کی بہتری کے لیے بھی ہمیں عملی طور پر کردار ادا کرنا ہو گا۔

حاصل سبق

یہ قصہ سنانے کا مقصد یہ ہے کہ ہم میں سے کچھ لوگ جو کہ ووٹ ایسی پارٹی کو دیتے ہیں جس نے ہمیشہ ہمارے زخموں پر مرہم رکھنے کے بجائے نمک چھڑکا ہے اور ہمارے حقوق غصب کیے ہیں اور پھر شکوہ کرتے ہیں کہ جماعت اسلامی الیکشن کیوں ہار جاتی ہے اور ہاں ایک بات کلیئر کر دوں کہ جو جماعت اسلامی کو ووٹ دیتے ہیں وہ کبھی شکایت نہیں کرتے کیونکہ ان کے سامنے اس ننھے سے پرندے کا کردار سامنے ہوتا ہے جس نے ابراہیم علیہ السلام کے لیے بڑھکائی جانے والی آگ کو بجھانے کے لئے اپنے رب سے دعا نہیں کی بلکہ عملی طور پر جتنا پانی چونچ میں آ سکتا تھا لیکر آگ بجھانے نکل پڑی مقصد اللہ کے حضور جواب دہی کی تیاری تھی کہ اے میرے پروردگار میرے اختیار میں جو تھا میں تیری رضا کی خاطر کر آیا۔




لہذا آئیے عہد کریں کہ ہم بھی کم از کم اس ننھے پرندے کی طرح ہمارے اختیار میں جو ہمارا اپنا ووٹ ہے اسے حالات کی بہتری کے لیے جماعت اسلامی کے حق میں استعمال کریں اور ترازو پر مہر لگائیں تاکہ اللہ تعالیٰ ہم پر اپنا رحم و فضل فرمائے آمین۔


ادارہ سی این پی اردو کا بلاگ کے لکھاری کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔

سی این پی ارد و پر اپنی تحریریں شائع کروانے کے لیے اپنی تحریر ( 5300061 0313 ) پر واٹس ایپ کریں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں