1,326

فاطمہ جناح یونیورسٹی میں مہنگائی ، امپورٹڈ وائس چانسلر کے نعرے ؛ گیارہ ملازمین معطل، داخلے پر پابندی

راولپنڈی (خان گلزار حسین سے )فاطمہ جناح وویمن یونیورسٹی انتظامیہ نے مہنگائی کے خلاف ایپکا کے پلیٹ فارم سے احتجاج کرنے اور دوران احتجاج امپورٹڈ وائس چانسلر نامنظور کے نعرے لگانے اور یونیورسٹی ملازمین کے ساتھ نارواسلوک کو قائدین کے سامنے لانے پر گیارہ ملازمین کو نوکری سے معطل کردیاگیا، ان ملازمین پر یونیورسٹی داخلے پر غیر اعلانیہ پابندی بھی عائد کردی گئی۔گذشتہ روز شام گئے یونیورسٹی کی ایڈیشنل رجسٹرار صدف احمد کی جانب سے سید عبدالوحید شاہ اسسٹنٹ،زاہد خان اسسٹنٹ،عدیل اقبال اسسٹنٹ،عبدالرازق نیٹ ورک ٹیکنیشن،اظہر اقبال لیب اسسٹنٹ،نعیم عجب لیب اسسٹنٹ،راشد حمید سٹور سپروائزر،محمد ندیم بٹ ڈرائیور،ملک ممتاز ڈرائیور،محمد پرویز ڈرائیوراورعرفان مالی کو الگ الگ معطلی کے حکم نامے واٹس ایپ کیے گئے،جن میں کہاگیاہے کہ وہ 31مئی اور یکم جون کو ہونے والے اس احتجاج میں شریک ہوگئے جو بلاجواز تھا،




انکااحتجاج کرنا ملازمت قواعد کے خلاف تھا، اس سے بالخصوص وویمن یونیورسٹی کی ساکھ برے طریقے سے متاثرہوئی جس کو برداشت نہیں کیاجاسکتا، معطلی کے حکم نامے جاری کرنے کے بعد انھیں یونیورسٹی کی طرف سے موبائل پر کال کرکے یہ بھی آگاہ کیاگیاکہ انکا یونیورسٹی داخلہ بھی بند ہے لہذا وہ یونیورسٹی آنے کی زحمت نہ کریں، انھیں کسی طوراندرنہیں آنے دیاجائے گا، سیکورٹی پرمعمور عملے کو بھی اس سے آگاہ کردیاگیاہے ، یاد رہے کہ یونیورسٹی ملازمین نے ایپکا کے مرکزی صدر کی اپیل پر یکم جون کو تنخواہوں میں اضافے اور ملازم کش پالیسوں کے خلاف احتجاج کیا، دیگر محکموں کی طرح یونیورسٹی ملازمین نے اپنے ادارے میں ہونے والی زیادتیوں کو سامنے لایا، ملازمین نے امپورٹڈ وائس چانسلر نامنظورکے نعرے لگائے اور بتایاکہ یونیورسٹی غریب ملازمین کی تمام ترمراعات بند ہیں ، انیس کے قریب ملازمین کو نوکریوں سے فارغ کیاجاچکاہے ،




ملازمین کی اکثریت کو دبانے کے لیے ان سے باز پرس کاسلسلہ بھی جاری ہے ، ادھر ایپکا کے مرکزی صدر حاجی ارشاد، ایڈیشنل سیکرٹری جنرل سردار حنیف، ایڈیشنل جنرل سیکرٹری پنجاب فہیم جنجوعہ ، ڈویژنل کوارڈینشن کے چیئرمین چوہدری ارشد ڈھلوں، ڈویژنل صدر چوہدری وحید مراد، ڈویژنل جنرل سیکرٹری واجد عباسی، ضلعی صدر ایپکا ایجوکیشن ارشادسلطان ملک ،عبدالحسیب قریشی اوردیگر نے یونیورسٹی حکام کی جانب سے ملازمین کی معطلی کی شدید مذمت کی اور اگلہ لائحہ عمل بنانے کے لیے آج اجلاس طلب کرلیا، جب کہ یونیورسٹی کے اندربھی ملازمین نے بڑے پیمانے پر احتجاج کی تیاریاں کرلی ہیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں