1,077

پاکستان سویٹ ہوم میں پری کیڈ ٹ کالج میں داخلوں کا آغاز ہوگیا

اسلام آباد ( سی این پی)پاکستان سویٹ ہوم پری کیڈٹ کالج میں جماعت ہشتم کے داخلوں کا آغاز کر دیا گیا۔10 فروری 2022 رجسٹریشن کی آخری تاریخ ہے ۔ شہداء اور حافظ قرآن کے لیے خصوصی نشتیں رکھی گئیں ہیں ۔پاکستان سویٹ ہوم کے سربراہ زمرد خان نے پری کیڈٹ کالج کی افتتاحی تقریب کے موقع پر پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ اللہ تعالی نے مجھے زندگی کے خوبصورت مشن سے نوازا ہے، پاکستان سویٹ ہوم اللہ تعالی کی بہت بڑی نعمت ہے، 2009/10 میں پاکستان سوت ہوم کا آغاز ایک بچے سے ہوا، اب ہزاروں کی تعداد میں بچے اور بچیاں سویٹ ہوم کا حصہ ہیں، سویٹ ہوم کے بچے اور بچیاں، قائد اعظم یونیورسٹی او ر مختلف کالجز میں زیر تعلیم ہیں، سویٹ ہوم کی بچیاں میرٹ پر کیڈٹ کالج لاڑکانہ کا بھی حصہ ہیں، گیارہ سالوں میں بہت سارے ایسے معجزات ہیں کو سویٹ ہوم کو بنانے میں سامنے آئے۔ زمرد خان کا کہنا تھا کہ گوجر خان اور سوہاوہ کے درمیان کیڈٹ کالج کا قیام بھی




ایک معجزہ ہی ہے، پاکستان سویٹ ہوم دنیا کی تاریخ کا پہلا یتیم بچوں کا کیڈٹ کالج ہے، جہاں ایک بچہ بھی وزیر اعظم کی سفارش پر بھی بغیر میرٹ کے داخلہ نہیں لے سکتا، شمالی وزیرستان کے علاقہ میر علی میں پاک فوج کے تعاون سے گولڈن ایرو سویٹ ہوم قائم ہے، اللہ تعالی کے مشن پر نکلا تو سیاست کو خیرباد کہ دیا،پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان سویٹ ہوم کے سربراہ زمرد خان نے کہا کہ ایک دن آئے ہمارے بچے اور بچیاں پارلیمنٹ کا حصہ بھی ہونگے، ہماری بدنصیبی کے کہ اچھے کاموں کو سامنے نہیں لایا جاتا، یتیم اور والدین کے زیر سایہ بچوں میں صرف ایک سیکنڈ کا فرق ہوتا ہے، کوئی ان کے دل سے پوچھے جو کسی کو پاپا جانی کہتا سن




کر حسرت سے دیکھتے ہیں، یہ بچے ہم سے زیادہ اچھے تعلیمی اداروں میں پڑھ رہے ہیں،اس ملک کا سب سے بڑا علمیہ یہ ہے کہ یہاں یتیم بچوں کی صدا سننے والا کوئی نہیں ہے، ہم چاہتے ہیں کہ ہماری آواز پورے ملک تک پہنچے، پورے پاکستان میں جتنے بھی یتیم بچے اور بچیاں ہمارے کیڈٹ کالج اور تعلیمی اداروں میں تعلیم حاصل کر سکتے ہیں، ہمارا پیغام ہے کہ ساتویں جماعت پاس کرنے والے بچے اور بچیاں ہمارے کالجز میں داخلے لیں، 10 فروری سے پہلے یتیم بچے اور بچیاں پاکستان سویٹ ہوم کی ویب سائٹ سے داخلے کے لیے فارم ڈانلوڈ کر کے داخلے کے لیے اپلائی کریں، یتیم بچے اور بچیاں ملک کے 30 سنٹرز میں امتحان دے سکتے ہیں، ان داخلوں کے لیے بچے آن لائن انٹرویوز بھی دے سکتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں