1,177

الشفاء ٹرسٹ نے سوئس لیزرز کے مدد سے موتیا اور قرنیہ کی سرجری شروع کردی

راولپنڈی (سی این پی)الشفاء ٹرسٹ نے جدید ترین جرمن اور سوئس لیزرز کے مدد سے موتیا اور قرنیہ کی سرجری شروع کر دی ہے۔جبکہ چلڈرن آئی ہسپتال راولپنڈی میں آئی کینسر میں مبتلا بچوں کے علاج کے لیے کیموتھراپی کا بھی آغاز کر دیا گیا ہے۔ الشفاءٹرسٹ کے صدر میجر جنرل (ریٹائرڈ) رحمت خان نے کہا ہے 2021 میں 80 فیصد مستحق مریضوں کا علاج بالکل مفت کیا گیا۔انہوں نے گزشتہ سال ٹرسٹ کی خدمات بتاتے ہوئے کہا کہ ہم لوگوں کو بہترین علاج فراہم کرنے کے لیے اپنے ہسپتالوں کومسلسل اپ گریڈ کرنے میں مصروف ہیں اور کیمو تھراپی کی نئی سہولت سے آنکھوں کے کینسر کی تمام اقسام کا علاج ایک ہی چھت کے نیچے ہوسکے گا۔جنرل رحمت خان نے کہا کہ ٹرسٹ نے کرونا کی وباء کے دوران لوگوں کی کافی مدد کی ہے اور اس دوران ہمارے ایک سو سے زائد ڈاکٹرز اور پیرا




میڈیکل سٹاف انفیکشن کا شکار ہوئے جبکہ چند جان کی بازی بھی ہار گئے اور ہمیں ان تمام لوگوں پر فخر ہے جنہوں سخت حالات میں اپنی خدمات جاری رکھیں۔وباء کے دوران ویکسینیشن کے دو مراکز قائم کیے گئے تھے۔ ایک نجی طور پر درآمد شدہ ویکسین لگانے کے لئے اور دوسرا ٹرائلز کے لئے جس دوران ریکارڈ وقت میں تمام اہداف حاصل کر لئے گئے۔ موبائل ویکسینیشن ٹیموں نے گھر گھر ویکسینیشن کو یقینی بنایا اور مظفرآباد، سکھر، کوہاٹ اور راولپنڈی کے دیہی علاقوں میں 20,000 خوراکیں فراہم کیں۔انہوں نے بتایا کہ 2021 میں چکوال میں ایک نیا آئی ہسپتال آپریشنل کیا گیا جہاں روزانہ 500 او پی ڈی مریضوں کا علاج اور 50 آپریشن کئے جا سکتے ہیں۔ اگست 2021 میں ایشیا کے سب سے بڑے چلڈرن آئی ہسپتال کا آغاز کیا گیا جس پر ایک ارب روپے لاگت آئی۔ انہوں نے بتایا کہ الشفاء ٹرسٹ نے نظر کے چشموں کی ضرورت ختم کرنے کے لیے جدید ترین آئی ڈراپس کا ٹرائل بھی شروع کر دیا ہے اور جلد آنکھوں کے کینسر کے مریضوں کے لیے خصوصی ریڈی ایشن تھراپی بھی دستیاب ہو جائے گی۔جنرل رحمت نے کہا کہ الشفاء آئی ہسپتال میں آنکھوں کے علاج کی دنیا میں پائی جانے والی ہر سہولت دستیاب ہے۔صاحب حیثیت مریضوں کو علاج کی غرض سے باہر جانے کی ضرورت نہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں