1,039

دارالامان ۔خواتین کے بیانات کیلئے چار خواتین سول ججز کی تقرری

راولپنڈی ( اقبال ملک سے)ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج راولپنڈی آصف مجید اعوان نے کسی بھی طرح کی وجوہات پرراولپنڈی کے دارالامان میں آنے والی خواتین کے بیان ریکارڈ کرنے اوردارلامان سے متعلق ان کی درخواستوں پر کاروائی کے لئے 4خواتین سول ججوں کی نامزدگی کر دی ہے نامزد خواتین ججوں کے دائرہ اختیار میں آنے والے تھانوں کو بھی واضح کر دیا گیا ہے اس ضمن میں ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج راولپنڈی کی جانب سے جاری احکامات کے تحت سول جج جوڈیشل مجسٹریٹ سمیعہ حنیف کو تھانہ صادق آباد،




نیوٹاؤن،پیرودھائی،مورگاہ،نصیر آباد اور ویسٹریج کے تھانے سونپے گئے ہیں،سول جج جوڈیشل مجسٹریٹ محترمہ شگفتہ کو تھانہ کینٹ، چونترہ،سی ٹی ڈی،ویمن،ایف آئی اے اور تھانہ گنجمنڈی جبکہ سول جج جوڈیشل مجسٹریٹ فہمیدہ حیات کو تھانہ ایئر پورٹ، اینٹی کرپشن بنی، سٹی، صدر بیرونی اور سول لائن تھانہ اور سول جج جوڈیشل مجسٹریٹ ثنا افضل کو تھانہ ریلوے،آر اے بازار،وارث خان،ریس کورس،




رتہ امرال اور تھانہ روات پر مقرر کیا گیا ہے اسی طرح سب ڈویژن گوجرخان کے لئے سول جج جوڈیشل مجسٹریٹ سائرہ ارشداورسب ڈویژن ٹیکسلا کے لئے سول جج جوڈیشل مجسٹریٹ شبانہ ساہی کو نامزد کیا گیا ہے نامزد کردہ خواتین ججز دارالامان آنے والی خواتین کے ضابطہ فوجداری کی دفعہ164کے تحت بیانات ریکارڈ کرنے اور اس حوالے سے موصولہ درخواستوں پر فوری کاروائی کر کے نمٹانے کی ذمہ دار ہوں گی جبکہ مذکورہ خواتین ججوں میں سے کسی کی عدم دستیابی کی صورت میں سنیارٹی میں ان کے بعد آنے والی خاتون سول جج یہ ذمہ داری ادا کریں گی اور اس حوالے سے کوئی بھی درخواست براہ راست سیشن جج کو نہیں بھجوائی جا سکے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں