1,053

سپریم کورٹ نے کینٹ بورڈز کو نجی سکولز سیل کرنے سے روک دیا

اسلام آباد ( سی این پی ) سپریم کورٹ میں کنٹونمنٹ علاقوں سے نجی سکولز کی بے داخلی کیخلاف درخواستوں پر سماعت ہوئی,سپریم کورٹ نے کینٹ بورڈز کو نجی سکولز سیل کرنے سے روک دیاعدالت نے ملک بھر کے کنٹونمنٹ بورڈز کو نوٹس جاری کرتے ہوئےجواب طلب کرلیا.

یاد رہے کی پرائیویٹ سکول ایسوسی ایشن کے مطابق ملک بھر کےکینٹ بورڈز میں 8300 نجی سکولز اور 37 لاکھ بچے زیر تعلیم ہیں،




نجی سکولز کے وکیل قلب حسن نے دلائل میں کہا کہ سکولوں کو سیل کیا جا رہا ہے، بچے کہاں جائیں گے، سپریم کورٹ نے نجی سکولز کو سنے بغیر فیصلہ دیا تھا،

عدالت عظمیٰ میں والدین کے وکیل حامد خان نے دلائل میں استدعا کی کہ اصل کیس تو رہائشی پلاٹ پر سکول بنانے کا تھا،ایک سول کیس میں موقف سنے بفیر سخت حکم جاری کیا گیا،

عدالت نے سماعت غیر معینہ مدت تک ملتوی کر دی سپریم کورٹ نے ملک بھر میں 42 کنٹونمنٹس میں قائم پرائیویٹ تعلیمی اداروں کی بے دخلی کےلیے دائر نظر ثانی اپیل کی سماعت کے موقع پر عدالت عظمیٰ کے ہی جاری حکم پر عمل درآمد روکتے ہوۓ کنٹونمنٹ بورڈز کو نوٹسز جاری کر دئیے ہیں۔




کیس کی سماعت جسٹس اعجاز الاحسن کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی۔ عدالت عظمیٰ نے اس موقع پر کینٹ بورڈز کو نجی سکولز سیل کرنے سے روکتے ہوۓ ملک بھر کے 42 کنٹونمنٹ بورڈز کو نوٹس جاری کرتے ہوۓ جواب طلب کر لیا ہے۔واضح رہے کنٹونمنٹ ایریاز سے نجی تعلیمی اداروں کی بے دخلی بابت سابق چیف جسٹس ثاقب نثار نے حکم جاری کیا تھا.




جس پر عمل درآمد کرتے ہوۓ اب ملک بھر کے 42 کنٹونمنٹ بورڈز نے اپنے اپنے ایریاز میں موجود نجی تعلیمی اداروں کو بند کرنے کے نوٹسز جاری کر رکھے ہیں.

عدالت عظمیٰ نے معاملہ سے متعلق نجی سکول مالکان اور والدین کی طرف سے دائر 15 مختلف نظر ثانی اپیلیں کی سماعت ایک ساتھ کرنے کا حکم دیتے ہوۓ معاملہ کی سماعت غیر معینہ مدت تک کے لئے ملتوی کر دی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں