1,035

سعودی صحافی کے قتل میں ملوث ملزم گرفتار

اسلام آباد ( ڈان نیوز ) فرانسیسی پولیس نے سعودی صحافی جمال خاشقجی کے قتل میں ملوث اسکواڈ کے ایک ملزم کو گرفتارکر لیا۔

ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق 2018 میں استنبول میں واقع سعودی قونصلیٹ نے صحافی کے قتل پر انصاف کا مطالبہ کیا تھا۔




عدالتی و ائیرپورٹ ذرائع کا کہنا ہےکہ 33 سالہ خالد العُطیبی کو ترکی کے جاری کردہ وارنٹ گرفتاری کی بنیاد پر سرحدی پولیس نے حراست میں لیا، ملزم پیرس کے شارل دی گول ائیر پورٹ سے ریاض کی پرواز میں سوار ہورہا تھا تب پولیس نے اسے گرفتار کیا۔

انہوں نے کہا کہ ملزم کو آج (بدھ) کو پراسیکیوٹر کے روبرو پیش کیا جائےگا۔

ملزم ان 26 سعودیوں میں سے ایک ہے جنہیں ترکی نے اکتوبر 2020 سےشروع ہونے والے مقدمے میں فرار قرار دیا تھا، گرفتار ملزم پر جرم ثابت ہونے کی صورت میں اسے عمر قید کی سزا سنائی جاسکتی ہے۔

ترکی میں جن 26 فرار افراد پر مقدمہ چلایا جا رہا ہے، ان میں سے 2 افراد سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے معاونین ہیں، ترکی میں کسی بھی سعودی عہدیدار کو قتل کے لیے زاتی طور پر عدالت کا سامنا نہیں کرنا پڑا ہے۔

خالد العُطیبی ان 17 افراد میں سے ایک ہیں جن پر امریکا نے 2018 کے قتل میں ملوث ہونے کے سبب سرزمین پر داخلے کی پابندی عائد کی ہوئی ہے۔




فرانس کی زیر حراست ملزم کو ترکی میں تحویل کے خلاف مقدمہ لڑنے کا حق حاصل ہے، اگر وہ ایسا کرتا ہیں تو فرانسیسی عدالت کو فیصلہ کرنا ہوگا کہ ترک حوالگی کی درخواست کو زیر التوا رکھا جائے یا ملزم کو اس شرط پر رہاکردیا جائے کہ وہ فرانس میں نہیں رہ سکتا۔





عدالت کو یہ فیصلہ کرنے میں کافی وقت لگ سکتا ہے کہ آیا ملزم کو اس کی خواہش کے خلاف ترکی کے حوالے کیا جاسکتا ہے یا نہیں۔

ستمبر 2020 میں سعودی عدالت نے بند کمرے میں کیے گئے فیصلے میں 5 سزائے موت کے احکامات کو کالعدم قرار دیتے ہوئے ملزمان کی سزا 20 سال قید میں تبدیل کردی تھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں