1,083

پولیس کالونی راوت بنیادی سہولتوں سے محروم

راولپنڈی ( سی این پی )41سال قبل راوت کے علاقے میں بننے والی پولیس کالونی سوسائٹی کی انتظامیہ کی میں نہ مانوں کی پالیسی کے باعث مسائل کا گڑھ بن گئی ، مکینوں کے لیے واپڈ نے بجلی کے دروازے بند کرکے سوسائٹی کو غیرقانونی قرار دے ڈالا، سوسائٹی میں پینے کا پانی ہے نہ صفائی کا کوئی انتظام ، خالی پلاٹ فلتھ ڈپو بن چکے ، مچھروں کی بہتات نے اہل علاقہ کا جینا دوبھر کردیا، مرکزی سڑک اور گلیاں کھنڈر بن چکی ہیں ۔1980میں روات میں پولیس کالونی بنائی گئی ، جہاں بلند بانگ دعوے کرکے ملازمین وغیرہ کو اس جانب راغب کیاگیا،




41سال گذرنے کے باوجود سوسائٹی کے مکین بنیاد ی ضروریات سے محروم ہیں ، سو سے زاہد گھروں میں پانی نہیں آتا، دیگر گھروں میں کچھ دیر کے لیے پانی آئے گااور پھر بند ہوجائے گا، اہل علاقہ پانی کی اس قلت کی وجہ سے ہر ہفتہ ٹینکر ڈالوانے پر مجبور ہوتے ہیں ، مین سڑکیں ٹو ٹ پھوٹ کا شکارہ ہیں گلیاں کھنڈرات کا منظر پیش کررہی ہیں ، خالی پلاٹوں میں بھنگ اور گھاس اگی ہوئی ہے ، پانی کھڑ ارہتاہے ، نالیوں اور مین ہولوں کی صفائی نہ ہونے کی وجہ سے وہ ابلتے رہتے ہیں جس کی وجہ سے مچھروں اور دیگر کیڑے مکوڑوں کی بہتات ہوچکی ہے ،




گھروں مچھر بھگائو سپرے وغیرہ بھی غیر موثر ہوچکے ہیں ، اہلیان سوسائٹی کا کہناہے کہ متعدد با ر سوسائٹی انتظامیہ کو درخواستیں دے چکے ہیں مگر کوئی پرسان حال نہیں ، انھوں نے ارباب اختیار سے اپیل کی ہے کہ ہمارے مسائل کو حل کیاجائے ورنہ ہم اپنے حقوق اور مسائل کو سامنے لانے کے لیے احتجاج کے دیگر راستے بھی اپنا سکتے ہیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں