1,059

بینظیر انکم سپورٹ پروگرام میں کرپشن ، فرزانہ راجہ کے وارنٹ گرفتاری جاری

اسلام آباد ( سی این پی ) بینظیر انکم سپورٹ پروگرام میں کرپشن کے ریفرنس پر سابق چیئر پرسن فرزانہ راجہ کے وارنٹ گرفتاری جاری کردیے گئے ، عدالت نے انہیں اشتہاری قرار دینے کی کارروائی شروع کرنے کا بھی حکم دے دیا۔ تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت نے سابق چیئرپرسن بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام فرزانہ راجہ کی عدالتی حاضری سے استثنی کی درخواست مسترد کرتے ہوئے ان کے وارنٹ گرفتاری جاری کیے جب کہ عدالت کی جانب سے انہیں اشتہاری قرار دینے کی کارروائی شروع کرنے کا حکم دیا گیا ہے ۔
بتایا گیا ہے کہ احتساب عدالت اسلام آباد کے جج اصغر علی نے بی آئی ایس پی ریفرنس کی سماعت کی ، جہاں فرزانہ راجہ کی جانب سے حاضری سے استثنیٰ کی درخواست دائر کی گئی جس پر فاضل جج نے اظہار برہمی کیا اور کہا کہ فرزانہ راجہ ریفرنس دائر ہونے کے بعد سے اب تک عدالت پیش نہیں ہوئیں ، ایک سال سے حاضری سے ایک روزہ استثنیٰ لیا جا رہا ہے ، اب پتہ چلا ہے کہ وہ 10 سال قبل پاکستان سے امریکا منتقل ہوچکی ہیں ۔




بعد ازاں عدالت نے حاضری سے استثنیٰ کی درخواست مسترد کرتے ہوئے فرزانہ راجا کے وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے اور ملزمہ کو اشتہاری قرار دینے کی کارروائی شروع کرنے کا بھی حکم دیا ، عدالت نے شریک ملزم راجہ عبد المناف کے ناقابل ضمانت وارنٹس گرفتاری جاری کرتے ہوئے آئندہ سماعت پر فرد جرم کے لیے تمام ملزمان کو طلب کر لیا جس کے بعد مقدمے کی مزید سماعت 24 مئی تک ملتوی کردی گئی۔




یاد رہے کہ بینظیر انکم سپورٹ پروگرام میں مبینہ کرپشن کی تحقیقات کے دوران کچھ عرصہ قبل اسلام آباد میں گریڈ 22 کے کنٹرولر جنرل اکاؤنٹس خرم ہمایوں نے مبینہ خودکشی کر لی تھی ، کنٹرولر جنرل اکاؤنٹس خرم ہمایوں نے کل صبح گھر پر سر میں گولی مار کر خودکشی کی ، جس کے بارے میں پولیس کا کہنا ہے کہ نیب خرم ہمایوں کے خلاف بینظیر انکم سپورٹ پروگرام میں مبینہ کرپشن کی تحقیقات کر رہا تھا ، جب کہ خرم ہمایوں کے خاندانی ذرائع کا کہنا ہے وہ اپنے خلاف نیب کی کارروائی کے باعث شدید ذہنی دباؤ کا شکار تھے ، کئی روز سے نوکری چھوڑنے یا لمبی چھٹی پر جانے کو سوچ رہے تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں