1,310

اڈیالہ جیل میں تصادم .. 11 قیدی زخمی

راولپنڈی ( سی این پی ) سینٹرل جیل اڈیالہ میں قیدیوں و حوالاتیوں کے دو گروپوں میں تصادم کے نتیجے میں متعدد قیدی و حوالاتی زخمی ہو گئے تصادم کے باعث جیل کا احاطہ میدان جنگ بن گیا، تیز دار آلات ،ڈنڈوں اور دیگر اشیاکے آزادانہ استعمال سے کسی کو بیچ بچاؤ کرانے کی بھی جرات نہ ہوئی اور جیل عملہ بھی لڑائی پر قابو پانے میں ناکام رہا جس پر اضافی نفری طلب کر کے متحارب گروہوں کو قابو کیا گیا لڑائی جھگڑے کے دوران درجنوں اسیران زخمی ہوگئے جن میں سے دو کو تشویشناک حالت میں
ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال منتقل کردیا گیا ادھر صوبائی وزیر جیل خانہ جات فیاض الحسن چوہان نے جیل میں جھگڑے کانوٹس لیتے ہوئے ڈپٹی سپرٹنڈنٹ جیل کو معطل کرکے آئی جی جیل خانہ جات سے 24گھنٹے میں رپورٹ طلب کرلی اطلاعات کے مطابق بدھ کی سہ پہر سینٹرل جیل اڈیالہ میں دو گروپ آپس میں الجھ بیٹھے جس کے بعد جیل کا اندرونی حصہ میدان جنگ بن گیا تصادم میں زبیر ولد سرور، صباحت ولد ریاست، عامر ولد منظورحسین اور عمار ولد یاسر،




عمر زمان اور بیت اللہ زخمی ہوگئے جن میں سے عمر زمان اور ہیبت اللہ کوڈی ایچ کیو منتقل کردیاگیا، متعدداسیران کو جیل ہسپتال میں طبی امداد دی گئی اور بعض کو جیل ہسپتال میں داخل کیاگیاہے متعدد زخمیوں کو بغیر کسی مرہم پٹی کے انکی بارکوں میں بھجوادیاگیاجب کہ دونوں گروپوں کے کچھ افرادکے اندھیری کوٹھری میں منتقل کیے جانے کی اطلاعات ہیں ، یہ بھی بتایاجاتاہے کہ جھگڑے کے دوران چھرے ، چاقو،خنجر، کانٹے ، چمچوں اور بلیڈز وغیرہ کا استعمال کیاگیاتاہم جیل حکام نے اس کی تصدیق نہیں کی ،جیل میں جھگڑااس حصے میں ہوا جہاں قتل میں سزایافتہ قیدیوں کو رکھاجاتاہے جھگڑے کی وجہ شور کرنا بیان کیاجاتاہے اور ابتدائی تلخی صباحت، ہبیت اللہ اور عامر زمان کے مابین ہوئی ،بیت اللہ کراچی کمپنی تھانے جبکہ عامر زمان تھانہ صدرواہ میں درج قتل کے مقدمات میں سزایافتہ ہیں ۔ادھر وزیر جیل خانہ جات پنجاب فیاض الحسن چوہان نے اڈیالہ جیل





راولپنڈی میں دو گروپوں کے درمیان لڑائی کے معاملے پر نوٹس لیتے ہوئے آئی جی جیل خانہ جات پنجاب سے چوبیس گھنٹوں میں ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ طلب کرلی ،ایڈیشنل چیف سیکریٹری ہوم سے ڈپٹی سپرٹنڈنٹ ( ایگزیکٹو)مظہر پنجوتحہ کو فوری طور پر معطل کرنے کی سفارش بھی کی گئی ہے،ڈپٹی سپرٹنڈنٹ ایگزیکٹو کی معطلی کی سفارش فرائض میں غفلت برتنے پر کی گئی ،صوبائی وزیر کا کہناہے کہ جیلوں میں کسی قسم کے گروپ یا مافیا کو پنپنے کا موقع نہیں دیا جائے گا۔یہاں یہ امر قابل ذکرہے کہ اڈیالہ جیل میں ڈرگ مافیا، وبھتہ مافیاکے انکشافات چند روز قبل سامنے آئے تھے ، جب کہ جیل کے اندر موجود مختلف گروپوں کے مابین جھگڑے بھی دو ہفتے قبل منظر عام پر آچکے ہیں ، جیل کے اندر جوئے کی محافل سجنے کے دوران جھگڑے بھی ہوچکے ہیں ، جن کی انکوائریاں بھی ہوئی ، مگر تاحال جیل کے اندر کسی بھی مافیا پر کوئی ہاتھ نہیں ڈالا جاسکا، اور نہ مافیا کی شکل میں گھومنے والوں کی بارکیں الگ کی جاسکی
جھگڑے میں زخمی ہونے والے دونوں قیدیوں کو عدالت سزائے موت سنا چکی ہے
جھگڑے کے دوران ایک قیدی کا کان کاٹ دئیے جانے کی اطلاع موصول ہوئی ہے ذرائع کے مطابق
دونوں گروپس میں تصادم کے باعث اڈیالہ جیل میں تاحال قیدیوں حوالاتیوں کی گنتی مکمل نہیں ہو سکی.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں