1,079

وزیر زراعت پنجاب سید حسین جہانیاں گردیزی کی زیرِ صدارت کاشتکارتنظیموں سے مشاورتی اجلاس کا انعقاد

راولپنڈی ( سی این پی )وزیر اعظم پاکستان عمران خان کے ویژن اور وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی زیر قیادت کاشتکاروں کے جائز مطالبات کے حل کے لئے ترجیحی بنیادوں پر اقدامات کئے جا رہے ہیں۔حکومت پنجاب کی ترجیحات میں زرعی ترقی اور کسانوں کی خوشحالی سرِ فہرست ہے یہ بات وزیر زراعت پنجاب سید حسین جہانیاں گردیزی نے کاشتکار تنظیموں کے نمائندگان کیلئے منعقدہ مشاورتی اجلاس کی صدارت کے دوران کہی۔اجلاس میں سیکرٹری زراعت پنجاب اسد رحمان گیلانی بھی شریک ہوئے۔اجلاس میں کسان اتحاد،فارمز ایسوسی ایشن آف پاکستان اور کسان بورڈ کے نمائندگان نے صوبائی وزیر زراعت کو اپنے مطالبات پیش کئے۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر زراعت سید حسین جہانیاں گردیزی نے کہا کہ کاشتکاروں




کے جائز مطالبات کے حل کیلئے ہم اُن کے شانہ بشانہ شریک ہیں اور اس کے حل کے لئے ہر سطح پر عملی اقدامات کئے جائیں گے۔ انھوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب کی ذاتی کوششوں سے تاریخ میں پہلی مرتبہ گنے کے کاشتکاروں کو اُن کا جائز حق ملا ہے اور آلو کے کاشتکاروں کو بھی اچھے دام موصول ہوئے ہیں۔اس موقع پر وزیر زراعت نے تحقیقاتی اداروں کے فصلوں کی نئی اقسام کی دریافت کو بھی سراہا اور انہیں بتایا کہ محکمہ نے پہلی مرتبہ بریڈنگ رائٹس کو پوری طرح لاگو کر دیا ہے اور اب فصلوں کی اقسام کی منظوری ڈی این اے فنگر پرنٹ کے بغیر نہیں ہو سکتی ہے۔وزیر زراعت نے کہا کہ ٹیوب ویلوں پر بجلی کے بلوں میں تحفیف کے لئے وفاقی حکومت کو خصوصی طور پرسفارشات ارسال کی جائیں گی۔اس کے علاوہ معیاری زرعی مداخل کی دستیابی کے لئے محکمہ زراعت پوری طرح متحرک ہے۔گذشتہ دو سالوں کے دوران جعلی زرعی ادویات اور غیرمعیاری کھادوں کی تیاری میں ملوث افراد کو 19 کروڑ روپے جرمانہ عائد کیا گیا اور18 ایسی فیکٹریوں کا خاتمہ کیا گیاجو جعلی زرعی ادویات کے دھندے میں ملوث تھیں۔




انھوں نے کاشتکار تنظیموں کے نمائندگان کو بتایا کہ اس سلسلے میں محکمہ نے آن لائن شکایات بذریعہ ایس ایم ایس/ واٹس ایپ کا اجراء کیا ہوا ہے ا ور کسی بھی شکایت پر فوری کاروائی عمل میں لائی جا رہی ہے۔وزیر زراعت نے کاشتکار تنظیموں کے زرعی زمینوں پر رہائشی کالونیاں بنانے کا نوٹس لیتے ہوئے اس بابت قانون سازی کی ہدایات کیں۔وزیر زراعت نے آبیانہ کے بڑھتے ہوئے ریٹس کے حل کے لئے محکمہ آبپاشی کے تعاون سے معاملات اور لینڈ ریونیو ریکارڈ سنٹر میں کاشتکاروں کو درپیش مسائل کو حل کرنے کی یقین دہانی بھی کرائی۔ اس موقع پر سیکرٹری زراعت پنجاب اسد رحمان گیلانی نے کہا کہ محکمہ زراعت کسان تنظیموں کے نمائندگان کی مشاورت سے کاشتکاروں کی فلاح کے لئے اقدامات کر رہا ہے تاکہ پیداوری ہدف کو حاصل کر کے صوبہ میں فوڈ سیکیورٹی کو یقینی بنایا جائے۔ اجلاس میں خالد کھوکھر صدر کسان اتحاد،آفاق احمد ٹوانہ چیف ایگریکٹو آفیسر فارمر ایسوسی ایشن آف پاکستان،شوکت علی چڈھر مرکزی صدر کسان بورڈ آف پاکستان،سید وقار رضوی جنرل سیکرٹری کسان بورڈ و دیگر شریک ہوئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں