1,142

پولیس شناختی کارڈزکے اجراء کیلئے نئی سٹینڈرڈائزڈ پالیسی جاری کر دی گئی۔

لاہور( سی این پی ) انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب انعام غنی نے کہاہے کہ محکمہ پولیس میں کام کرنے والے تمام افسران و اہلکاروں کے پاس جدید سیکیورٹی فورسز کی طرز پر یکساں ڈیزائن اور سیکیورٹی فیچرز سے آراستہ پولیس شناختی کارڈز کا موجود ہونا ضروری ہے تاکہ پولیس کا انٹرنل سیکیورٹی اور کمیونیکیشن سسٹم مزید بہتر ہو اور وہ زیادہ بہتر انداز میں عوام کی خدمت اور حفاظت کے فرائض سر انجام دے سکیں۔ انہوں نے مزیدکہاکہ پولیس ملازمین کے سنٹرلائزڈ ڈیٹا بیس ہیومن ریسورس مینجمنٹ انفارمیشن سسٹم (HRMIS) کی بنیاد پر افسران و اہلکاروں کے نئے پولیس شناختی کارڈز کے اجراء کیلئے نیا اسٹینڈنگ آرڈر جاری کردیا گیا ہے جس کے مطابق 30مارچ 2021کے بعد صوبے کے تمام اضلاع اور فیلڈ یونٹس میں خدمات سرا نجام دینے والے افسران و اہلکاروں کے پاس دوران ڈیوٹی نیا شناختی کارڈ ہونا ضروری ہے جبکہ منظور شدہ نئے ڈیزائن کے علاوہ تمام دیگر محکمانہ کارڈز30مارچ2021کے بعد منسوخ تصور کئے جائینگے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سٹینڈرڈائزڈ اور سیکیورٹی فیچر کے حامل نئے پولیس شناختی کارڈز کے اجراء کے حوالے سے سٹینڈنگ آرڈر جاری کرتے ہوئے کیا۔یہ سٹینڈنگ آرڈر،پولیس آرڈر2002کے آرٹیکل 10(3)کے تحت جاری کیا گیا ہے۔




تفصیلات کے مطابق موجودہ سیکیورٹی حالات اور پولیس اہلکاروں کی بہتر ورکنگ کے پیش نظر پولیس شناختی کارڈزکے اجراء کیلئے نئی سٹینڈرڈائزڈ پالیسی جاری کر دی گئی ہے جس میں پولیس شناختی کارڈز کے اجراء بارے ایس او پیز تفصیلی طور پر بیان کئے گئے ہیں۔ سٹینڈنگ آرڈر میں جاری ہدایات کے مطابق ایڈیشنل آئی جی اسٹیبلشمنٹ پولیس شناختی کارڈز کے اجراء اور قواعد ضوابط کے مجموعی طور پر انچارج ہونگے جو پولیس کی تمام یونٹس میں شناختی کارڈز کے اجراء بارے ایس او پیز پرمن و عن عمل درآمد یقینی بنائیں گے۔ اے آئی جی ایڈمن اینڈ سیکیورٹی سنٹرل پولیس آفس میں حاضر سروس اور ریٹائر ہوجانیوالے تمام ملازمین کے کارڈز کے اجراء کے ذمہ دار ہونگے اسی طرح پنجاب پولیس میں خدمات سر انجام دینے والے ا ور ریٹائر ہونے والے گزیٹڈ آفیسرز کے کارڈز بھی اے آئی جی ایڈمن اینڈ سیکیورٹی جاری کریں گے۔ ریٹائرڈ ہونے والے تمام گزیٹڈ آفیسرز جو پنجاب پولیس کا شناختی کارڈ رکھنا چاہتے ہیں انکے کارڈز بھی اے آئی جی ایڈمن اینڈ سیکیورٹی جاری کریں گے۔ ڈی پی اوز، سٹی پولیس آفیسرز، اور کیپیٹل سٹی پولیس آفیسرز اپنے اضلاع میں گریڈ ایک سے سولہ تک حاضر سروس یا ریٹائر ہوجانے والے اہلکاروں کے کارڈز جاری کرنے کے مجاز ہونگے۔آر پی اوز اور یونٹ ہیڈز اپنے زیر انتظام اضلاع میں کارڈز کے اجراء و قواعد کی پاسداری کیلئے گریڈ 18کے آفیسرکو تعینات کریں گے۔تمام کارڈز ہیومن ریسورس مینجمنٹ سسٹم کی بنیاد پر آئی جی پنجاب کے منظور کردہ ڈیزائن کے مطابق جاری ہونگے۔ ریٹائرڈ آفیسرز پولیس کارڈز کے اجراء کیلئے اے آئی جی ایڈ من اینڈ سیکیورٹی یا متعلقہ ڈی پی او کو منظور شدہ فارم کے ساتھ درخواست جمع کروائیں گے۔
پولیس شناختی کارڈ پر تصویر کا بیک گراؤنڈ سفید ہوگا۔ تمام حاضر سروس اہلکاروں کی بغیر کیپ کے یونیفارم والی تصویر کارڈ پر آویزاں ہونی چاہئیے۔ پنجاب پولیس کی آئی ٹی برانچ تمام اضلاع اور یونٹس کو کارڈز کی ویری فیکیشن چیک کرنے کیلئے QRریڈر مہیا کرے گی۔تمام کارڈز کے اجراء کا دورانیہ پانچ برس کیلئے ہوگا لیکن رینک میں تبدیلی یا ٹرانسفر ہونے کی صورت میں نیا کارڈ حاصل کیا جاسکتا ہے۔تمام کارڈز پنجاب پولیس کی ملکیت ہونگے اور کارڈ کی معیاد ختم ہونے، تبادلہ، ہٹانا، برخاست اور سروس سے ریٹائرمنٹ پر کارڈ اجراء والے آفس واپس جمع کروا یا جائے گا۔شناختی کارڈ گم ہونے کی صورت میں فوری طور پر تھانے میں رپورٹ درج کروانا ہوگی۔ڈیلی ڈائری رپورٹ کی کاپی جو کارڈ جاری کرنے والی اتھارٹی کی جانب سے فارورڈ کردہ ہوآئی ٹی برانچ اور سی پی او لاہور کو کارڈ بلاک کرنے کیلئے بھیجی جائیگی۔نئے شناختی کارڈ کی اجراء کی درخواست پرانا کارڈ بلاک کئے بغیر کسی صورت مکمل نہیں کی جائے گی۔ اسی طرح برخاستگی، ریٹائرمنٹ اور تبادلہ پر کارڈ واپس نہ کرنے کی درخواستیں سات روز کے اندر آئی ٹی برانچ کو لازمی بھجوائی جائیں۔




سٹینڈنگ آرڈر میں مزید ہدایت کی گئی ہے کہ تمام اضلاع اور یونٹس میں سیکیورٹی فیچر سے مزین، منظورشدہ ڈیزائن کے حامل سٹینڈرڈائزڈ کارڈز کے اجراء کیلئے اے آئی جی ایڈمن کلوز کوارڈی نیشن کریں گے۔ ایک مرتبہ منظورشدہ ڈیزائن کے حامل تمام کارڈز تیار ہوجائیں تو اہلکاروں کے کوائف اضلا ع کے پاس موجود تھرمل پرنٹرز کے ذریعے ان کارڈز پر درج کردئیے جائیں۔30مارچ2021کے بعد دوران ڈیوٹی تمام رینک کے افسران و اہلکاروں کے پاس نئے کارڈز موجود ہونا ضروری ہے۔یہ کارڈز پولیس دفاتر میں داخلے کے وقت اہلکاروں (حاضر سروس -ریٹائرڈ) کی شناخت کیلئے استعمال ہونگے۔ ان کارڈز کے علاوہ تمام دیگر محکمانہ کارڈز 30مارچ2021کے بعد منسوخ تصور کئے جائینگے۔
٭٭٭٭٭٭

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں